امام کعبہ کو کیوں گرفتار کیا گیا ہے؟ عالم اسلام میں تھرتھلی مچ گئی

سعودی حکومت نے امام کعبہ شیخ ڈاکٹر صالح الطالب حکومتی پالیسیوں پر مبینہ تنقید کرنے پر گرفتار کر لیاہے ۔

ڈان نیوز کے مطابق سعودی عرب میں قیدیوں کے حقوق کیلئے کام کرنے والے ”پریزنر آف کنسائینس“ گروپ نے امام کعبہ کی گرفتاری کی تصدیق کی ہے جسے الجزیرہ نے شائع کیا ہے۔ یہ گروپ سعودی عرب میں مذہبی شخصیات، علما اور مبلغین کی گرفتاری کی نگرانی کرتا ہے اور اس حوالے سے دستاویزات مرتب کرتا ہے۔

پریزنر آف کنسائینس کا کہناہے کہ امام کعبہ کوعام طور پر رائج برائیوں کے خلاف عوامی سطح پر آواز بلند کرنے کی اسلامی ذمہ داری کے حوالے سے دیے گئے ایک وعظ کے باعث گرفتار کیا گیا۔

دوسری جانب عرب ویب سائٹ ’خلیج آن لائن‘ نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ شیخ ڈاکٹر صالح الطالب، جو مکہ میں جج کے فرائض بھی انجام دے چکے ہیں، نے اپنی تقریر میں کنسرٹس اور تفریحاتی تقریبات میں نامحرم مرد و خواتین کے گھلنے ملنے کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔تاہم انہوں نے براہِ راست سعودی حکام پر کوئی تنقید نہیں کی تھی، خیال رہے کہ ان کی گرفتاری کے چند گھنٹوں بعد ہی ان کا انگریزی اور عربی ٹوئٹر اکائونٹ بھی بند ہوگیا تھا۔

یاد رہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی سربراہی میں سعودی عرب کے قدامت پسند معاشرے میں کئی جدید اصلاحات متعارف کروائی گئیں ہیں، جس کے تحت خواتین کو عوامی اجتماعات میں شرکت کی اجازت کے لیے قوانین میں نرمی بھی کی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں