وزیراعظم کیخلاف نیب کیس کے معاملے پر تحریک انصاف کے وزراء میں اختلافات

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کے خلاف نیب کیس کے معاملے پر تحریک انصاف کے وزراء کے درمیان اختلافات سامنے آگئے۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز جیو نیوز کے پروگرام ’کیپیٹل ٹالک‘ میں وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا تھا کہ قومی احتساب بیورو (نیب) پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کی توہین کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیب کا عمران خان کے خلاف خیبر پختونخوا ہیلی کاپٹر کیس چلانا زیادتی ہے اور نیب کو عمران خان کے خلاف یہ کیس ختم کر دینا چاہیے، دنیا نیب پر ہنستی ہے۔

تاہم آج جیو نیوز کے پروگرام ’کیپیٹل ٹاک‘ ہی میں وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے فواد چوہدری کے بیان سے مکمل طور پر اختلاف کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیب کو بالکل اختیار ہے کہ وہ وزیر اعظم سے بھی پوچھ سکتا ہے کیوں کہ جو قانون عام آدمی کیلئے وہی وزیر اعظم کیلئے بھی ہے۔

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ فواد چوہدری اپنے بیان کی وضاحت خود کریں گے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان پر خیبرپختونخوا حکومت کا سرکاری ہیلی کاپٹر استعمال کرنے کا الزام ہے جس کی تحقیات نیب کررہا ہے۔

نیب کے مطابق ومران خان نے سرکاری ہیلی کاپٹر ایم آئی 17 پر 22 گھنٹے اور ایکیوریل ہیلی کاپٹر پر 52 گھنٹے پرواز کی اور اوسطاً 28 ہزار روپے کے حساب سے 74 گھنٹوں کے 21 لاکھ 7 ہزار 181 روپے ادا کیے۔

نیب اعلامیے میں کہا گیا تھا کہ رپورٹ کے مطابق عمران خان اگر پرائیوٹ کمپنیوں سے ہیلی کاپٹرز حاصل کرتے تو ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر کا فی گھنٹہ خرچ 10 سے 12 لاکھ روپے جب کہ ایکیوریل ہیلی کاپٹر کا فی گھنٹہ خرچ 5 سے 6 لاکھ روپے ادا کرنا پڑتا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں